پاکستان سیاسی صورت حال

ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی صاحب کو گرفتار کیا تو زعیم قادری صاحب نے تھانہ کوتوالی جا کر ڈاکٹر اشرف آصف جلالی صاحب کو رہا کروا کر دانش مندی سے مسئلہ حل کروایا پھر جب دسمبر 2017 ء میں خواجہ حمید الدین سیالوی رحمت اللہ علیہ صاحب نے تاجدار ختم نبوت کانفرسز منعقد کرنے کا اعلان کیا تو اس وقت بھی زعیم قادری صاحب نے بڑا اعلی کردار ادا کیا…

. اعجاز چوہدری بھی آج کل لاہور شہر کے اہم سیاسی کھلاڑی بنے ہوئے ہیں کیوںکہ پاکستان تحریک انصاف نے ان کو کافی عرصہ صوبائی صدر پنجاب پاکستان تحریک انصاف کا عہدہ دے رکھا میاں محمود الرشید بھی لاہور شہر کے اہم سیاسی کھلاڑی بنے ہوئے ہیں ان 2013 ء میں جب میاں محمود الرشید صاحب جب صوبائی اسمبلی پنجاب کے ممبر منتخب ہوئے تو پاکستان تحریک انصاف کو اپوزیشن جماعتوں میں سے سب سے زیادہ نشستیں حاصل کرنے کی بنیاد پر اپوزیشن لیڈر منتحب کرنے کا موقع ملا تو پاکستان تحریک انصاف نے میاں محمود الرشید صاحب کو اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی منتحب کیا

… ڈاکٹر یاسمین راشد بھی آج کل لاہور شہر کی اہم سیاسی کھلاڑی بنی ہوئی ہیں ان 2013 ء میں ڈاکٹر یاسمین راشد نے پاکستان تحریک انصاف کے پلیٹ فارم سے صوبائی اسمبلی کے الیکشن میں حصہ لیا لیکن پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد کو شکست فاش برداشت کرنا پڑی سن 2017 ء میں وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف صاحب کی نا اہلی کے بعد لاہور شہر کے حلقہ این اے 125 میں ضمنی الیکشن کا دنگل سجا تو پاکستان مسلم لیگ نواز شریف نے حلقہ این اے 125 سے سابقہ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز شریف صاحب کو اپنا امیدوار نامزد کیا

تو بیگم کلثوم نواز شریف صاحبہ کے مقابلے میں ڈاکٹر یاسمین راشد کو امید وار نامزد کیا لیکن اس بار بھی قسمت نے ساتھ نہ دیا اور ڈاکٹر یاسمین راشد کو بیگم کلثوم نواز شریف صاحبہ سے شکست فاش برداشت کرنا پڑی….سن 2018 ء کے الیکشن میں ایک بار پھر پاکستان تحریک انصاف نے ڈاکٹر یاسمین راشد کو صوبائی اسمبلی کا امیدوار نامزد کیا ڈاکٹر یاسمین راشد نے اس بار بھر پور انداز میں اپنی الیکشن مہم چلائی اور شیر لاہور میں پاکستان تحریک انصاف کی ہوا بھی زیادہ ہونے جا بھر پور فائدہ اٹھایا اور اپنی مہم زور شور سے جاری رکھی… لیکن اس بار بھی قسمت نے ڈاکٹر یاسمین راشد کو ساتھ نہ دیا اور اپنے مخالف امید وار سے شکست فاش برداشت کرنا پڑی…

. لیکن اس بار پاکستان تحریک انصاف نے خواتین کی مخصوص نشستوں پر ڈاکٹر یاسمین راشد صاحبہ کو ایم پی اے منتخب کروایا….. اور ڈاکٹری شبعہ سے منسلک ہونے کی وجہ سے صحت کا شبعہ ڈاکٹر یاسمین راشد کو وزیر صحت کاشبعہ دینے پر غور کیا… اور پنجاب میں وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے اپنی کابینہ منتحب کرتے وقت ڈاکٹر یاسمین راشد کو صوبائی وزیر برائے صحت نامزد کیا… جو بڑے اچھے طریقے سے اپنی وزارت چلا رہی ہیں…

.. سردار ایاز صادق بھی لاہور شہر کے انتہائی اہم سیاسی کھلاڑی ہیں سردار ایاز صادق نے ان 1997 ے میں اپنی سیاست کا آغاز کیا سردار ایاز صادق صاحب نے عمران خان کے قریبی دوست ہونے کے باعث عمران خان کی پارٹی پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا اور ان 2002 ء کا الیکشن پاکستان تحریک انصاف کے پلیٹ فارم سے لڑا لیکن اس کے بعد سردار ایاز صادق صاحب کے عمران خان سے اختلافات ہو گئے جس کے بعد سردار ایاز صادق صاحب نے پاکستان تحریک انصاف کو خیر آباد کہ کر پاکستان مسلم لیگ نواز شریف میں شمولیت کا اعلان کیا تو سن 2013 ء کے الیکشن میں سردار ایاز صادق صاحب عمران خان کے مد مقابل امید وار کے طور پر سامنے آئے

اور پاکستان مسلم لیگ نواز شریف کے پلیٹ فارم سے سردار ایاز صادق صاحب نے اپنے حریف اور پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ اور اپنے قریبی دوست اور اپنےکلاس فیلو عمران خان کو شکست فاش دی تو پاکستان مسلم لیگ نواز شریف نے انعام کے طور پر سردار ایاز صادق صاحب کو سپیکر قومی اسمبلی بنایا.. لیکن عمران خان نے الیکشن ٹربیونل میں رٹ پٹیشن دائر کی اور اس رٹ پٹیشن کے پیش نظر الیکشن ٹربیونل نے سردار ایاز صادق کی رکنیت برائے قومی اسمبلی منسوخ کر کے دوبارہ الیکشن کروانے کا حکم دیا تو اس وقفہ میں پاکستان مسلم لیگ نواز شریف نے اسمبلی اجلاس نہ بلانے کا فیصلہ کیا..


. پاکستان مسلم لیگ نواز شریف نے ایک بار پھر سردار ایاز صادق صاحب کو امیدوار برائے قومی اسمبلی منتحب کیا اور پاکستان تحریک انصاف نے سردار ایاز صادق صاحب کے مقابلے میں عبدالعلیم خان کو امیدوار نامزد کیاعمران خان نے مہم کے دن لاہور میں قیام کر کے علیم خان کی مہم زبردست انداز میں چلائی لیکن مقابلے میں سردار ایاز صادق صاحب نے بھی بھر پور انداز میں مہم چلائی جس کے نتیجہ میں سردار ایاز صادق صاحب نے اپنے مخالف امیدوار عبد العلیم خان کو شکست فاش سے دو چار کیا…

. یوں اس فرح کے بعد پاکستان مسلم لیگ نواز شریف نے ایک بار پھر سردار ایاز صادق صاحب کو اسپیکر قومی اسمبلی منتحب کیا…. سن 2018 ء کے الیکشن میں ایک بار پھر سردار ایاز صادق نے پاکستان مسلم لیگ نواز شریف کے پلیٹ فارم سے الیکشن میں پنجہ آزمایا اور قومی اسمبلی کے الیکشن میں فتح حاصل کی….

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *