ظفر عباس انجم صاحب سے پوچھے گئے چھ سوالات

آج صبح صبح پتہ چلا کہ پاکیزہ گروپ آف کمپنی کے ڈائریکٹر سیلز اینڈ مارکیٹنگ شاہد عالم صاحب نے ایک بار پھر ایک نئ ویڈیو وائرل کی ہے ساتھ ہی ساتھ ایک تحریر بھی سوشل میڈیا ایپ فیس بک پر اپ لوڈ کی ہے جس میں انہوں نے پھالیہ پریس کلب کے صدر ظفر عباس انجم صاحب کو مخاطب کرتے ہوئے کچھ سوالات کئے ہیں ان کا کہنا ہے کہ ظفر عباس انجم صاحب نے مجھ سے چھ سوالات کئے تھے میں بھی ظفر عباس انجم صاحب سے چھ سوالات کر رہا ہوں میں ظفر عباس انجم صاحب سے پوچھے گئے چھ سوالات کے جوابات دے چکا ہوں

اب میرے چھ سوالات کے جوابات دینا ظفر عباس انجم صاحب کے ذمے قرض ہیں جس پر ظفر عباس انجم صاحب کے زیر سایہ کام کرنے والے ایک مقامی صحافی عدنان صاحب جو اس مسئلہ پر کافی متحرک نظر آ رہے ہیں انہوں نے کچھ بحث و تکرار کیا لیکن ابھی تک کوئی نتیجہ منظر عام پر نہیں آ سکا کیوں کہ ابھی تک فائنل ڈیسکشن نہیں ہو پا رہی خیر اس ساری صورت حال کو سامنے رکھتے ہوئے صورت حال سے تنگ آ کر سی ای او پاکیزہ گروپ آف کمپنی ملک محمد حسنین صاحب نے دونوں گروپس کو مزید بات کرنے سے منع کیا اور کہا کہ یہ لڑائی ختم کی جائے جس کے باعث کافی عرصہ سے جاری یہ لفظی جنگ کچھ حد تک ختم ہوئی

لیکن ظفر عباس انجم صاحب کے زیر سایہ چلنے والے پریس کلب پھالیہ کے ایک صحافی عدنان صاحب اور پاکیزہ گروپ آف کمپنی کے سیلز اینڈ مارکیٹنگ ڈائریکٹر شاہد عالم کے درمیان اب بھی معمولی بحث و تکرار جاری ہے لیکن ملک محمد حسنین صاحب کی درخواست کے بعد یہ کافی عرصہ سے جاری لفظی جنگ کچھ حد تک کم ہو گئ ہے کیوں کہ پاکیزہ گروپ آف کمپنی کے سی ای او ملک محمد حسنین صاحب اعلان کر چکے ہیں کہ میں چار دن سے لاہور سرگودھا اور اسلام آباد میں میٹنگز میں مصروف ہوں

اس وجہ سے آ نہیں سکا میری طلعت صاحب سے بات ہو گئ ہے میں کچھ دن تک واپس آ کر مل بیٹھ کر پریس کلب میں ایک میٹنگ رکھوں گا جس میں یہ معاملہ حل کیا جائے گا اور تمام صورت حال عوام کے سامنے لائی جائے گئ اس وقت سے َََظفرعباس انجم صاحب بھی خاموش ہیں لیکن پھر اسی واقع کو ذکر کرنا پڑے گا کہ ظفر عباس انجم صاحب کے زیر سایہ چلنے والے پریس کلب کے ممبر عدنان گجر صاحب اور ملک محمد حسنین صاحب کے زیر سایہ چلنے والی پاکیزہ گروپ آف کمپنی کے ڈائریکٹر سیلز اینڈ مارکیٹنگ شاہد عالم صاحب کے درمیان معمولی بحث جاری ہے

جس کے باعث عوام شدید ذہنی تکلیف میں مبتلا ہے اور حالات سے انوسٹر حضرات بھی تنگ آ چکے ہیں کہ کہیں ہمارے ساتھ ڈبل شاہ والا فراڈ تو نہیں ہو رہا کہیں ہمارے ساتھ ٹھگی تو نہیں لگ رہی کہیں ہمارا پیسہ جوا کے طور پر تو نہیں کہ چل گیا تو چل گیا ورنہ ان پیسوں سے بھی جائیں گئے یا ہمارے پیسہ سے آنے والی آمدنی سود کے ذمرہ میں تو نہیں آ رہی جب کہ پاکیزہ گروپ آف کمپنی کے سی ای او ملک محمد حسنین صاحب بار بار اعلان کر چکے ہیں کہ ہمارا کاروبار سود سے پاک ہے لیکن حتمی اعلان اس وقت ہی ہو گا جب کوئی براہ راست پروگرام ہو کر حقائق قوم کے سامنے نہیں آ جاتے…

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *